تمام ضعیف احادیث کو بغیر ترتیب سے دیکھنے کیلئے بٹن پر کلک کریں

Tuesday, November 25, 2014

٭ قادیانیوں کی مردود روایات

ابراہیم بن محمدﷺ سچے نبی ہوتے
نبی کریم ﷺ نے فرمایا:
وَلَوْ عَاشَ لَكَانَ صِدِّيقًا نَبِيًّ
” اور اگر (ابراہیم بن محمد رسول اللہ ﷺ) زندہ رہتے تو صدیق نبی ہوتے۔ “
 (سنن ابن ماجہ: ۱۵۱۱)
سخت ضعیف: یہ روایت دو وجہ سے مردود ہے:
۱: اس کا بنیادی راوی ابو شیبہ ابراہیم بن عثمان الواسطی جمہور کے نزدیک سخت مجروح ہے۔ اس کےبارے میں:
٭امام ترمذی نے فرمایا: "منکر الحدیث" (سنن ترمذی: ۱۰۲۶)
٭امام نسائی نے فرمایا: "متروک الحدیث" (کتاب الضعفاء والمتروکین: ۱۱)
٭امام شعبہ نے فرمایا: "کذب واللہ ! " اللہ کی قسم! اس نے جھوٹ بولا ہے۔ (العلل للامام احمد: ۴۶۲، وسندہ صحیح)
جمہور محدثین کی جرح کے مقابلے میں یزید بن ہارون وغیرہ بعض علماء کا ابو شیبہ کی تعریف کرنا جمہور کے مقابلے میں ہونے کی وجہ سے مردود ہے، لہٰذا عبد الرحمٰن خادم قادیانی کا اپنی کتاب "پاکٹ بک" (ص۲۶۹- ۲۷۰) میں اس راوی کا دفاع کرنا اصولِ حدیث اور اسماءالرجال کی رُو سے غلط ہے۔
۲:حکم بن عتیبہ مدلس ہیں اور یہ روایت عن سے ہے، اور اس بات کا کوئی ثبوت نہیں کہ یہ حدیث حکم بن عتیبہ نےمقسم سے سنی تھی۔
********



No comments:

تبصرہ کیجئے